یمنی بحران کا کوئی فوجی حل نہیں: ایران

تہران، 14 جون، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران نے یمنی علاقے الحدیدہ پر سعودی اتحاد کی حالیہ جارحیت کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ یمنی بحران کا کوئی فوجی حل نہیں اور نہ ہی جارحانہ رویے سے اس مسئلے کا خاتمہ ہوگا.

دفترخارجہ کے ترجمان 'بہرام قاسمی' نے جمعرات کے روز اپنے ایک بیان میں یمنی بندرگاہ الحدیدہ پر سعودی اتحاد کے فضائی اور سمندری حملوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے یمن میں بڑھتے ہوئے انسانی بحران پر تشویش کا اظہار کیا.

انہوں نے یمن پر جارحیت کرنے والوں سے مطالبہ کیا کہ وہ دراندازی اور حملوں کے سلسلے کو بند کریں کیونکہ یمن کے مسئلے کا کوئی فوجی حل نہیں ہے.

قاسمی نے مزید بتایا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے بارہا اس بات پر زور دیا ہے کہ یمنی بحران کا حل فوجی طریقے سے نہیں بلکہ ایک پرامن مذاکراتی عمل سے ہی ممکن ہے.

یہ بات قابل ذکر ہے کہ یمن میں عدن بندرگاہ پر قبضے کے بعد سعودی عرب کی سربراہی میں فوجی اتحاد نے الحدیدہ بندرگاہ پر بھی قبضہ جمانے کے مقصد سے فضائی اور سمندری حملوں کا آغاز کیا ہے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@



برچسب ها