امریکی یکطرفہ رویہ عالمی قوانین اور اقوام کی آزادی کیخلاف ہے: روحانی

تہران، 14 جون، ارنا - صدر اسلامی جمہوریہ ایران نے کہا ہے کہ امریکہ کے یکطرفہ اقدامات اور دوسروں کے سر پر اپنے اندرونی قوانین کو تھوپنا بین الاقوامی قوانین اور اقوام کی خودمختاری کے خلاف ہیں.

یہ بات ڈاکٹر 'حسن روحانی' نے جمعرات کے روز ملائیشیا کے وزیراعظم 'مہاتیر محمد' کے ساتھ ایک ٹیلی فونک رابطے کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں ملائیشیا میں 14ویں انتخابات کے کامیاب انعقاد اور عوام کی بھرپور شرکت کو سراہتے ہوئے مہاتیر محمد کو ملائیشیا کا نیا وزیر اعظم بننے پر مبارکباد پیش کی.

انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ وزیراعظم مہاتیر محمد کے دور میں ایران اور ملائیشیا کے درمیان تعلقات کو قابل قدر فروغ مل گا.

انہوں نے عید الفطر کی مناسبت سے ملائیشیائی قوم اور حکومت کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے مزید کہا کہ دنیا کو اسلام کے امن پسند چہرے کو بہتر طریقے سے روشناس کرانے کی ضرورت ہے.

ایرانی صدر نے کہا کہ کہ امریکہ نے عالمی قوانین کی پرواہ نہ کرتے ہوئے غیرقانونی فیصلے کے تحت جوہری معاہدے سے الگ ہوگیا.

انہوں نے مزید کہا کہ ایران اب بھی جوہری معاہدے کے تحفظ کے لئے تعمیری تعاون کا خواہاں ہے اور ہمیں امید ہے کہ تمام ممالک قوانین کے بہتر نفاذ کے لئے تعاون اور مدد کریں گے.

ملائیشیائی وزیراعظم نے کہا کہ مختلف ممالک بالخصوص ایران کے ساتھ تعلقات کو فروغ دینا ملائشییا کی اہم ترجیح ہے.

انہوں نےمزید کہا کہ ہم سمجھتے ہیں کہ یکطرفہ اقدامات سے ممالک کے درمیان تعاون اور باہمی اعتماد متاثر ہوگا.

مہاتیر محمد نے کہا کہ ملائیشیا، اسلامی جمہوریہ ایران کے عالمی امن و سلامتی کے فروغ، انسداد دہشتگردی اور انتہاپسندی کی روک تھام کے لئے تعاون پر آمادہ ہے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@



برچسب ها

سیاسی